Welcome Guys in this new post. This post includes Best Collection of Sad Poetry. We Hope you will Like it. Give It A Look.






Kabhi aa mere aangan me zara sham k bad"

Mil k mangen gy mohabat ki dua sham k bad"

Jin ki taqder me khawab ni nend ni"

Aurh lety hen sitaron ki rida sham k bad"

Aao mil beth k kuch waqt guzarein"

Me sunaon tujhay,tu
apni suna sham k bad"

Wo mujhy chor gaya sham se pehlay pehlay"

Ye na poocho mera kia haal hua us sham k bad"

Wo yahan they to her ek sham saji rehti thi"

Ab to lagta hai sham hoti nahi us sham k bad




ہم نے بہت کچھ سیکھا اس دنیا میں
نہ سیکھ سکے تو بس کسی کو بھول جانا

*یہ الگ بات ہے کی وہ مجھے حاصل نہیں ہے*
مگر اسکے سوا کوئی میرے عشق کے قابل نہیں ہے

وہ مجھے چھوڑ گیا تو یقیں آیا
کوئ بھی شخص ضروری نہیں کسی کے لئے

بِچھڑنا جن سے نامُمکن تھا
مجھے اُن سے بِچھڑے کئی روز بیت گئے

برا تو ہر کوئی ہے
فرشتے نہ ہم ہیں نہ تم ہو

انسان اس وقت کتنا بے بس ہوتا ہے
جب کسی کو دیکھنے کے لیۓ ترس رہا ہو

تا عمر بس ایک ہی سبق یاد رکھئیے
       تعلق اور عبادت میں نیت صاف رکھئیے

بھرم رکھا ہوا ہے میرے رب نے ورنہ 
کوئی بھی خوبی میرے اندر نہیں ھے


‏میں نے زہر بھی زخموں پہ چھڑک کر دیکھا ھے
اتنی آہیں نہیں نکلتی جتنی تیری بے رخی سے نکلتی ہیں


عروج پر تو ہر کوئی ملاتا ہے ہاتھوں میں ہاتھ
جو مشکلوں میں ساتھ چلے انھیں ھم یار کہتے ہیں

ظرف رکھتے تو جان لیتے 
چپ بھی ایک شکایت ہے

آئے ہیں  وہ مریضِ  محبت کو  دیکھ  کر
آنسوں  بتا  رہے  ہیں کوئی  بات  ہو  گئی 

وہ حقیقت جو جون کہتا ہے
کس میں ہمت ہے کون کہتا ہے

موسمی شے نہیں یہ محبت
کیجئے تو۔۔۔ سدا کیجئے 

میں اکیلا رہ جاؤں گا ۔۔۔ 
مگر اپنا معیار نہیں گِراؤں گا ۔

‏شاید کسی مقام پہ میں کام آ سکوں
مجھ کو بھی ساتھ لیجیئے تنہا نہ جائیے

کاہے ماتم میں گزاری جائے
زیست کا حق ہے سنواری جائے

زندگی سے نمٹ رہے ہیں
۔موت کیا ھے خدا ہی جان

چل رہا تھا سلسلہ دعاؤں کا میں نے بھی اک دعا مانگی
میرے اپنے خوش رہے میرے ساتھ بھی میرے بعد بھی 

ﺟﯿﺖ ﺳﮑﺘﺎ ﺗﮭﺎ____ ﻣﺎﺕ ﻟﮯ ﺁﯾﺎ
..ﮐﻤﺒﺨﺖ، ﻣﺤﺒﺖ ﭘﮧ ﺑﺎﺕ ﻟﮯ ﺁﯾﺎ

غلامی تو صرف تیرے عشق کی تھی 
باقی 
یہ دل۔۔❤
پہلے بھی نواب تھا آج بھی نواب ہے۔۔

‏لوگ مجھے پوچھتے ہیں تم نے اس میں کیا دیکھا
میں نے کہا جب اسے دیکھا تو اس کے بعد کچھ نہیں دیکھا


تیرے لہجے نے کھول دی آنکھیں۔۔۔۔۔
میں تو اندھا یقین کرتا تھا تجھ پہ۔۔۔۔۔

کوئی تصویر بھیج دے تازہ
تیرے نقش بھول بیٹھا ہوں


♡ہم نے محبت کا بھرم سب سے جدا رکھا ہے♡

♡دیکھ زکر تیرا ہے مگر نام چھپا رکھا ہے♡


ہم تو صرف کردار دیکھتے ہیں صاحب
حسن تو ہم نے سرعام__ بکتا دیکھا ہے 

تیرے غصے کا بھی احترام کرتا ہوں...
بس تو یہ دیکھ میں کیا کیا کرتا ہوں..


دُرست کر ہی لیا میں نے ’’ نظریہ ‘‘ اپنا
، کہ ’’ درد ‘‘ نہ ہو تو محبت ’’ مذاق ‘‘ لگتی ہے

#کون کہتا ھے کہ تیری یاد سے بے خبر ھوں میں   
#میری آنکھوں سے پوچھ!میری رات کیسے گزرتی ھے


ﺑﮭﻼ ﺩﯾﮟ ﮔﮯ ﺗﻤﮭﯿﮟ ﺗﮭﻮﮌﺍ ﺻﺒﺮ
ﺗﻮ ﮐﯿﺠﺌﯿﮯ
ﺁﭘﮑﯽ ﻃﺮﺡ ﮨﻮﻧﮯ ﻣﯿﮟ ﮐﭽﮫ ﻭﻗﺖ ﺗﻮ
ﻟﮕﮯ ﮔ


میں تیرے دل دماغ پہ چھا تھوڑی سکتا ہوں۔۔۔
جس طرح تم نبھا رہے ہو نبھا تھوڑی سکتا ہوں۔۔

رستہ بھی معلوم ہے پتے سے بھی واقف ہوں۔۔۔۔
پھر بھی میں تیرے گھر آ تھوڑی سکتا ہوں۔۔۔۔


کچھ دن بہت خوش رہا تھا میں
اب اُس خوشی کا قرض اتار رہا ہوں

دنیا کی باتوں سے مجھے  کوئی فرق نہیں  پڑتا 
 میری  ماں کہتی ہے کہ میں بہت اچھا ہوں*

اگر جو تم جان جاؤ تکلیف میری
تمہیں میری ہنسی پر ترس آئے گا

ملے تھے آج مدت میں بہت روۓ بہت تڑپے
وہ درد عشق سن سن کر ہم اپنا درد کہہ کہہ کر


لپٹ جاتے ہیں وہ بجلی کے ڈر سے
الہی ! یہ گھٹا دو دن تو برسے.



دلچسپ ہے آفت ہے قیامت ہے غضب ہے
بات ان کی ادا ان کی قد ان کا چلن ان کا
اکبر الہ آبادی


دیکھا ہزاروں دفعہ آپ کو 
پھر یہ بے قراری کسی ہے 

کتنی دفعہ میری صبح کو 
تیرے آنگن میں بیٹھے میں نے شام کیا 

منایا نہیں گیا مجھ سے اس بار
اس کی ناراضگی میں آباد کوئی اور تھا

کسی کو پھول دینا محبت نہیں ھے
اسےساری زندگی پھول کی طرح رکھنا محبت ھے

‏ابھی تو چند لفظوں میـــں سمیٹا ہے تجھے میــــں نــے
 ابھی تو میـــری کتابوں میـــں تیــــری تفسیر باقی ہــے

ادائیں نہ دیکھایا کر _کچھ لحاظ بھی کیا کر
کمزور دل والا ھوں __کچھ تو خیال کیا کر

💔کیوں ناراض رھتے ھو میری نادان سی حرکتوں سے
کچھ دن کی تو زندگی ھے پھر چلے جائیں گے ہمیشہ کے لئے


جو دل❤کو اچھے لگتے ہیں ۔۔ اُنہی کو اپنا کہتے ہیں
منافق بن کر رشتوں کی ------- سیاست ہم نہیں کرتے 

میرے لیے تم بن جاؤ چائے کی مانند 
اور میں پیتے پیتے نہ تھکوں تم کو 

خود کو تیری یادوں کا غـــــلام کر دیا 
تیری خاطر خود کو بدنـــــــــام کر دیا 

سنو میں بھی تلاش میں ھوں کسی اپنے کی
کوئی تم سا ھو لیکن کسی اور کا نہ ھو

تیرے عشق میں ڈوب کر قطرے سے دریا ہو جاؤں 
میں تجھ سے شروع ہو کر تجھ پر ہی ختم ہو جاؤں

دنیا نہ جان پائی کیسے ہیں اور کیوں ہیں
ہم سلجھے ہوۓ مزاج کے الجھے ہوۓ سے لوگ

ہزاروں لوگوں میں اک تم ہی کو اپنا سمجھا ہم ن
ورنہ نہ چاہت کی کمی تھی اور نہ ہی چاہنے والوں کی

میری اوقات کہاں تم سے ہم کلام ہونا
تیرے لہجے سے امیری کی مہک آتی ہیں.

اے صاحبِ عِشق اک فتویٰ تو دو
رخّ یار پہ مر جانا خود کشی ہے یا شہادت.

*‏زہر اس کے ہاتھ______ میں پکڑا ہی رہ گیا*
*‏میں مر گیا ان آنکھوں کی بیزاری دیکھ کر 


پتہ نہیں اس عمر میں دل کیسے ٹوٹ گیا 
میرے تو ابھی مٹی کے کھلونے بھی سلامت ہیں

وہ بیوفا ہے تو کیا مت کہو برا اسکو
کہ جو ہوا سو ہوا خوش رکھے خدا اسکو

نظر نہ آئے تو اسکی تلاش میں رہنا
کہیں ملے تو پلٹ کر نہ دیکھنا اسکو

وہ سادہ خو تھا زمانے کے خم سمجھتا کیا
ہوا کے ساتھ چلا لے اڑی ہوا اسکو 

وہ اپنے بارے میں کتنا ہے خوش گماں دیکھو
جب اسکو میں بھی نہ دیکھوں تو دیکھنا اسکو

اسے یہ دھن کہ مجھے کم سے کم اداس رکھے
مری دعا کہ خدا دے یہ حوصلہ اسکو

پناہ ڈھونڈ رہی ہے شبِ گرفتا دلاں
کوئی بتاؤ مرے گھر کا راستہ اسکو



              Thanks For Visiting. We Hope you like it. And Keep Visiting.

                                     

Post a Comment

Previous Post Next Post